Fayazul Hasan Chuhan

پانامہ کی سازش۔۔۔حقائق

نواز شریف ، ان کی فیملی اور ان کے حواری پچھلے 3 ماہ سے کھل کُھلا کر چیخنے اور چلانے لگے ہیں کہ CPEC کی تعمیر کی وجہ سے امریکہ اور عالمی اسٹیبلشمنٹ ہمارے خلاف سازش کر رہے ہیں اور نواز شریف کی سیاست،اس کی فیملی اور ذات کو نشانِ عبرت بنانے کی سازش ہو رہی ہے۔ حالانکہ حقیقت کچھ اور ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ پانامہ لیکس بنیادی طور پر پوری دنیا میں امریکی مفادات کی نگہداشت کر نے والی تمام اصلی اور جعلی مینڈیٹ والی حکومتوں کے خلاف روس اور پیوٹن کا حقیر سا تحفہ ہے۔عا لمی سیا ست میں بھو نچا ل بر پا کر نے و ا لی پا نا مہ لیکس کا ا یک ا نتہا ئی د لچسپ پہلو عا لمی تجزیہ نگا روں کے سا منے آیاہے، وہ یہ کہ ان لیکس کے پیچھے ا مر یکہ اور ا مر یکن سی آئی اے کا نہیں بلکہ ا مر یکہ اور پو ر پ کی سیا سی اور معا شی خو ا ہشا ت کے سینے پر پچھلے کئی سا لو ں سے مو نگ دلنے والے روس کے مر د آہن ولادیمیر پیو ٹن کا ہا تھ ہے۔ یو کر ا ئن کے ا یشو سے لے کرشا م کے مسئلے تک۔امر یکہ اور یو ر پ کو ناکو ں چنے چبو ا نے والا پیو ٹن مغر بی میڈ یا کی آ نکھوں میں کئی سا لو ں سے کھٹک رہا ہے۔امر یکی اور یو ر پی حکو متیں میڈ یا کا سہا را لے کر روس کے صدرولاد یمیر پیو ٹن کی کردار کشی کے مشن پر کئی سا لو ں سے فا ئزہیں ۔لیکن بد قسمتی سے وہ روس کے عو ا م میں پیو ٹن کے خلا ف نفر ت اور بغا و ت پید ا کر نے میں نا کا م رہی ہیں۔
مغر بی میڈیا کبھی یہ خبر بر یک کر تا ہے کہ پیو ٹن نے بد تر ین کر پشن کے ذریعے 20 ارب ڈالر ز جمع کر رکھے ہیں اور کبھی یہ رقم 40 ارب ڈالر ز اور حتیٰ کہ 100 ارب ڈالرز کی خبر یں بھی مغر بی میڈ یامیں گر د ش کر تی رہی ہیں ۔پیو ٹن کے خلا ف مغربی اور امر یکی میڈ یا کی طر ف سے کی جانے والی تما م ترکر د ا ر کشی کا مقصد دنیا میں روس کے بڑ ھتے ہوئے معا شی ،سیا سی اور د فا عی کردار کو ختم کرنا تھا ۔ ولاد یمیر پیو ٹن بنیا د ی طو ر پر ا نتہا ئی چا لا ک ،متحر ک اور سمجھدا ر شحض ہے۔سو و یت یو نین کی خفیہ ا نٹیلی جنس تنظیم کے جی بی میں 16 سا ل خد ما ت سر ا نجا م د ینے والے ولاد یمیر پیوٹن کا تعلق روس کے دوسر ے بڑے شہر سینٹ پیٹر ز بر گ سے ہے اور وہ فوج سے لیفٹیننٹ کر نل کے عہد ے سے ر یٹا ئر ہو کر مید ا ن سیا ست میں واردہوا ہے۔ 1999ء سے لے کر آج تک کبھی وزیرا عظم اور کبھی صد ر کے عہد ے پر فا ئز رہنے والاپیو ٹن پچھلے 15 سالوں سے امر یکہ اور یور پی مما لک کے بیشتر سا مر ا جی عزا ئم کے را ستے میں ایک بنیا د ی رکا و ٹ ہے۔ ولاد یمیر پیوٹن نے جہاں معا شی ، سیا سی ، دفاعی اور عا لمی سطح پر روس کو دو با رہ سُپر پا ور بنا نے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔وہیں پراُس نے معا شی معا ملات اور منی لا نڈرنگ جیسے معا شی جر م کو کنٹر ول کر نے کے لیے ایک انتہا ئی اہم ادارہ یکم نومبر 2001ء کوتشکیل دیا ۔ Russian Financial Management Service (RFM) رشین فنانشیل مینجمنٹ سر و س کے نا م سے قا ئم کیا گیا یہ ادارہ صر ف اور صر ف پیو ٹن کو جوابد ہ ہے۔ یہ روس کا ایک انتہا ئی خفیہ معاشی ا نٹیلی جنس ادارے کے طو ر پر ما نا اور گر دا نا جا تا ہے ۔ جد ید آلا ت اور مشینر ی سے مزین اس ادارے کو پوری دنیا کی سطح پر منی لا نڈ ر نگ، آ ف شور کمپنیز اور دیگر معا شی معا ملا ت پر قا بل اعتماداور طا قتور سمجھا جا تا ہے۔ کہا جا تا ہے کہ پیو ٹن نے اپنے اس طا قتور معا شی خفیہ ادارے کے ذریعے آف شور کمپنیز پر کا م کر نے والی دنیا کی چو تھی بڑی لا ء فر م مو سیک فونسیکا کے کمپیو ٹر سسٹم سے یہ ڈیٹا چر ا یا ہے۔ اس ڈیٹا کو حا صل کر نے کے بعد john doe نامی ا یک فر ضی شحض کے ذریعے یہ ڈ یٹا جر منی کے سب سے بڑ ے اخبا ر کے ایک سینئر صحا فی فریڈر ک آ بر مئیر کے حو ا لے کر دیا گیا اور پھر اس کے ذریعے یہ ڈیٹا تحقیقی صحا فت کی عا لمی تنظیم ICIJ تک پہنچا اور پھر ایک سا ل بعد یہ ڈ یٹا اور ا نفا ر مشن پو ر ی د ینا کے اربوں انسا نو ں کے دل و دما غ میں جا گز یں کر دیا گیا۔
پا نا مہ لیکس کا سب سے دلچسپ پہلو یہ ہے کہ ان ایک کر و ڑ پند ر ہ لاکھ فا ئلز میں سے ا یک بھی فا ئل کسی نا می گر ا می امر یکی سیا ست دان، بز نس مین اور سلیبر ٹی کے متعلق نہیں ہے ۔ اس پر یہ سو ا ل اُ ٹھتا ہے کہ ا گر ان لیکس اور معا شی سکینڈل کے پیچھے روس اور روسی صدر پیو ٹن کا ہا تھ ہے تو ا مر یکی ارباب بست و کشا د کے متعلق فا ئلز اور انفا رمیشن کو افشا ء کیو ں نہیں کیا گیا۔جنا ب والا!!ا نٹیلی جنس کا ا صول ہے کہ جب آپ نے کسی کو تبا ہ کرنا ہو تو آپ اس کے راز افشا ں کر دیتے ہیں لیکن اگر آپ نے اُس فر د ادارے اور ملک کو اپنے ہا تھوں میں رکھ کر ا پنی مر ضی سے چلا نا ہو تا ہے تو پھر اُس کے راز افشا ں نہیں کیے جا تے بلکہ ان ڈائر یکٹ طر یقے سے پیغا م دیا جاتا ہے کہ تمہا رے فلا ں فلاں راز اور حر کتیں اور ان کے ثبو ت ہما رے پاس ہیں۔اور پھر اُس ادارے فرد اور ملک کو ا پنی انگلیو ں پر نچا یا جا تا ہے ۔
کہا جا تا ہے کہ روس کی پاس ابھی امریکہ ، مغرب اور باقی دنیا کے سیا ستدانوں، حکمرا نوں اور کر پٹ ترین دولت مندوں کے بے تحا شا راز اور فائلیں موجود ہیں۔یہ فا ئلز کسی نہ کسی لیکس کے ذریعے اگلی اقساط میں نکا لی جا ئیں گی۔مغرب اور روس کی لڑائی میں ہمارے ملک کے بیچا رے شریف سیا ستدان اور حکمران مفت میں مارے گئے!!!یہی وجہ ہے کہ نواز شریف نے اپریل 2016ء میں لندن جا تے ہوئے 11 گھنٹے ماسکو قیام کیا۔دنیا کے سامنے طیارے میں فیول بھروانے کی وجہ رکھی لیکن در حقیقت 11 گھنٹے روس کی اسٹیبلشمنٹ کی منتیں کر تے رہے کہ ہماری آپ سے کو ئی دشمنی اور عناد نہیں ہے اِ س لیے آئندہ مغرب اور امریکہ کے خلاف میڈیا وار میں ہمیں رگڑا مت دیں۔۔!!!! مو سیک فونسیکا آف شور کمپنیز کو قانونی تحفط دینے وا لی دنیا کی چو تھی بڑی لاء فرم ہے۔ظاہری سی بات ہے اِس سے پہلے تین اور اِس کے بعد بھی پانچ چھ لاء فرم موجود ہیں، جن کے پاس دنیا کے ہزاروں کر پٹ ترین سیاستدانوں اور حکمرا نوں کے معا شی جرائم کی تفصیلات کروڑوں فا ئلز کی صورت میں موجود ہو نگی!!!اور اگر روس کے صدر ولاد یمیر پیوٹن کی سربراہی میں چلنے والے طاقتور اور خفیہ معا شی ادارے RFM کے پاس دنیا کی چو تھی بڑی لاء فرم کا ڈیٹا ہیک کرنے اور چُرانے کا فن اور گُر موجود ہے تو پھر پہلی تین اور اگلی پانچ چھ لاء فرم کا خفیہ ڈیٹا کس کھیت کی مو لی ہے۔۔کہ وہ۔۔RFM کی دسترس سے باہر ہو!!!!
لوہے اور مٹی کو ہاتھ لگ کر سونا بنانے کا فن گُر اور سُر جاننے والے پاکستان کے سب سے بڑے سیا سی خاندان کا سربراہ اِتنا ویلا ، فا رغ اور بیو قوف نہیں ہے کہ جب اُس کا سارا سیا سی کیریئر داؤ پر لگا ہوا تھا اور وہ روس کے دارالحکو مت ماسکو میں کئی گھنٹے ضائع کر رہا تھا۔حا لات، واقعات، قرائن اور نظائر یہ بتا تے ہیں کہ پاکستان میں مٹی سے لوہا ، پھر لوہے سے سونا اور سونے سے ہیرے جواہرات میں تلنے والے پانامی ڈاکوؤں کا کچھ نہ کچھ تعلق اور لینا دینا اب روس کے خفیہ معاشی ادارے RFM سے بھی ہے!!!!
اِس لیے میری آلِ شریف اور اُن کے وزراء اور مصاحبین سے گزارش ہے کہ CPEC اور اینٹی امریکہ جذبات کی آڑ میں اپنی لازوال بد دیانتیوں اور بے مثال معاشی چکر بازیوں سے جان چھڑانے کی کوششِ نامراد مت کریں اور فوراً صدر ممنون حسین کو زندہ ولی اور زندہ قطب کا درجہ دے کر اُن کا مزار تعمیر کریں جنہوں نے پیشین گوئی کر دی تھی کہ یہ اللہ کی پکڑ ہے اور بڑے بڑے چور اِس کے شکنجے میں ایسے آئیں گے کہ دنیا دیکھے گی!!!!