Untitled-1 copy

معروف قانون دان عاصمہ جہانگیر انتقال کر گئیں

 

لاہو: معروف قانون دان اور سابق صدر سپریم کورٹ بارعاصمہ جہانگیر انتقال کر گئیں ان کی عمر 66 سال تھی ۔ تفصیلات کے مطابق عاصمہ جہانگیر کو ہفتے اتوار کی رات دل کی تکلیف کے باعث نجی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹرز کے مطابق انہیں دل کا دورہ پڑا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکیں اور خالق حقیقی سے جاملیں۔ عاصمہ جہانگیر 27 جنوری 1952 کو لاہور میں پیدا ہوئیں، عاصمہ جہانگیر سماجی کارکن ہونے کے ساتھ ساتھ انسانی حقوق کے لیے بھی کام کرتی رہی ۔ ھیں،اس کے علاوہ عدلیہ بحالی تحریک میں بھی انہوں نے فعال کردار ادا کیا۔ عاصمہ جہانگیر کے سوگواران میں ایک بیٹا اور 2 بیٹیاں شامل ہیں۔عاصمہ جہانگیرسپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی صدر بننے والی پہلی اور آخری خاتون تھیں، ان کے علاوہ کوئی خاتون یہ اعزاز حاصل نہیں کرسکی۔انہوں نے نے عدلیہ بحالی کی تحریک میں اہم کرداراداکیااور 2007 میں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی صدر منتخب ہوئیں، وہ پاکستان کی پہلی خاتون ہیں جو اس عہدے پر فائز ہوئیں، عاصمہ جہانگیر کے بعد اب تک کوئی بھی خاتون سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی صدر منتخب نہیں ہوسکی۔ عاصمہ جہانگیر 27 جنوری 1952 کولاہورمیں پیداہوئیں ، انہوں نے 1978 میں پنجاب یونیورسٹی سے ایل ایل بی کیا۔ عاصمہ جہانگیر نے ضیا کے مارشل لا کے خلاف جمہوریت بحالی کی تحریک میں حصہ لیا اور 1983 میں جیل بھی کاٹی، بےنظیر بھٹو اور عاصمہ جہانگیر بچپن کی سہیلیاں تھیں لیکن دوستی کے باوجود عاصمہ جہانگیر نے بےنظیر بھٹوکی سیاسی مخالفت کی۔ عاصمہ جہانگیرانسانی حقوق کمیشن آف پاکستان کے بانیوں میں سے تھیں، انہیں حکومت پاکستان کی جانب سے 2010 میں ہلال امتیاز سے نوازا گیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *