nisar

برکس اعلامیہ : بھارت تیاری کرتا رہا ہم سوئے رہے۔ چودھری نثار

اسلام آبادٟ: سابق وزیر داخلہ چودھری نثار نے کہا ہے ۔ برکس میں پاکستان کے خلاف قرارداد آئی ۔ برکس اعلامیہ ہماری ناکامی ہے ۔ بھارت تیاری کرتا رہا ہم سوئے رہے ۔ ڈیڑھ سال تک جو قرارداد پاس نہ ہوئی اچانک چین میں کیسے پاس ہو ئی۔ انہوں نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا برکس اعلامیہ کے ذمے دارکون ہیں، برکس کا آخری اجلاس چین میں ہوا جس میں پاکستان کے خلاف قرارداد تھی جب کہ چین میں کانفرنس منعقد ہوئی اور ہمارے سفارت کار سورہے تھے۔ پاکستان کی سفارتکاری 24 گھنٹے کی نوکری ہے، ۔اگر دشمن کامیاب ہوگیا تو سفارت کار کیا کرتے رہے ۔ برکس پر دفتر کارجہ نے ہوم ورک کیوں نہین کیا۔اس قسم کی میٹنگز اچانک نہیں ہوا کرتیں ہمارے دشمن ایک سال سے پاکستان کی مخالفت میں لگے ہیں تو ہمارے سفارت کار کس مرض کی دوا ہیں، جو لوگ ذمہ دار تھے ان کی جواب طلبی ہونی چاہیے ۔انہوں نے کہا میں دنیا میں ہمارے دوست کم اوردشمن زیادہ ہیں، دنیا سے کہتا ہوں کہ پاکستان کی عزت کرو، 17 تاریخ کو ڈرون حملہ ہوا کسی نے بھی مذمت نہیں کی، امریکی ڈرون حملے قابل قبول نہیں اور اس حوالے سے پارلیمنٹ کا موقف واضح رہا ہے۔ جس دن ڈرون حمہ ہوا اس دن وزیراعظم نے امریکی سفیرسے ملاقات کی تاہم اگر وزیر اعظم ملک میں ہوتے تو اسمبلی میں معاملہ اٹھانے کے بجائے ان سے ہی پوچھتا۔سابق وزیر داخلہ نے کہا برما کے ساڑھے 4 لاکھ مسلمانوں کو جانوروں کی طرح ذبح کیا گیا، برما کی حکومت مسلمانوں کے قتل میں مکمل طور پر شامل ہے، برما کے مظلوموں کے ساتھ قراردادوں کے ساتھ کچھ عملی کام کرنے کی ضرورت ہے۔ انسانی حقوق کے کرتا دھرتا کتے کے مرنے پر تو ماتم کرتے ہیں لیکن روہنگیا مسلمانوں کی قتل وغارت پر چپ ہیں، حکومت روہنگیا مسلمانوں کی مدد کے لیے فنڈز کھولیں اور اس کی ابتدا ممبر پارلیمنٹ کریںروہنگیا مسلمانوں کا مسئلہ قراداد سے حل نہیںہوگا۔ حکومت روہنگیا مسلمانوں کےلئے فنڈز کا بندوبست کرے ۔ ارکان اسمبلی اپنی تنخواہ جمع کرائے۔ پارلیمانی کمیٹی تشکیل کر کر بنگلہ دیش بھیجی جائے گا۔ روہنگیا کے مسئلہ پر سپیکر تمام ممالک کو خط لکھیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *