Qamar-Javed-Bajwa

لا الہ الا اللہ کا وارث ہونے پر فخر ہے. آرمی چیف

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے عالمی طاقتیں ہمیں اپنی ناکامیوں کا ذمہ دار نہ ٹھہرائیں ہمیں لا الہ الا اللہ کا وارث ہونے پر فخر ہے ۔ ہم نے بہت ڈو مور کر لیا اب دنیا ڈو مور کرے ۔امریکہ سے امداد نہیں عزت و احترام چاہتے ہیں۔ بلوچستان میں بھارت کی دراندازی سب کے سامنے ہے ۔ بلوچستان میں زہر گھولنے والے کو تاک میں رکھا ہوا ہے،ہم اپنے پر مسلط جنگ کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے ۔ بھارت کو سمجھ لینا چاہئے کشمیر ی آزادی کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ پاکستان کشمیریوں کی اخلاقی و سفارتی ، سیاسی مدد جاری رکھے گا۔ ایسا پاکستان بنائیںجہاں طاقت کا اختیار ریاست کے ہاتھ میں ہو۔ انہوں نے جی ایچ کیو میں یوم دفاع کی یادگار شہدا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کشمیریوں کی حالات زار پر افسوس ہے ۔ کشمیر کی حمائت سے ہمیں کوئی نہیں روک سکتا۔افغانستان کی جنگ پاکستان میں نہیں لڑ سکتے ۔ بارڈر پر 2600 کلو میٹر پر باڑ لگا رہے ہیں، اپنی سرزمین کو کسی دوسرے کیخلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے افغانستان سے اپنی بساط سے بڑھ کر ہمدردی کی ۔ دشمن کی پسپائی اور ہماری کامرانی کا وقت ہے ۔ ہمارے سیکورٹی تحفظات کو بھی ذہن میں رکھنا ہوگا۔ اگر ہم نے دہشت گردی کا مقابلہ نہیں کیا تو پھر کسی ملک نے کچھ نہیں کیا۔ انہوں آرمی چیف نے کہا دشمن کا مقصد سی پیک کو نقصان پہنچانا ہے ۔ ہمارا دشمن جان لے ہم کٹ مریں گے اپنے ایک ایک انچ کا دفاع کرینگے جب تک ہماری جرات برقرار ہے کوئی ہمیں نقصان نہیں پہنچا سکتا،وطن کا ہر شخ اپریشن ردلفساد کا سپاہی ہے،مکمل کامیابی کے لیے قوم کا جذبہ ضروری ہے، دشمن جان لے کٹ مریں گے مگر پاکستان پر آنچ نہیں آنے دیں گے،آزادی سے آج تک قوم نے اپنے دفاع میں اہم کردار ادا کیا،حکومت کے ساتھ مل کرکئی محازوں پر اہم کردار ادا کر ر ہے ہیں۔ انہوں نے کہا شہدا کا خون ہم پر قرض ہے،غازیوں کا شکریہ جنہوںنے زخم کھائے اور وطن کو توا نا کیا،شہدا کے لواحقین کا شکریہ ادا کرتا ہوں،جو قومیں اپنے شہدا کو بھول جاتی ہیں تاریخ انہیں کبھی معاف نہیں کرتی،بھٹکے ہوئے لوگ جہاد نہیں فساد کر رہے ہیں،،مشکلات کے باوجود دفاع وطن ہمارا قومی امتیا ز ہے،دہشتگری کی جنگ میں میڈیا نے اہم کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا فوج قوم کے تعاون کے بغیر کچھ نہیں کر سکتی ۔ حکومت کے ساتھ کئی محاذوں پر ترقی میں اپنا کردار ادا کر رہے ہیں۔ ادارے مضبوط ہونگے تو پاکستان مضبوط ہوگا۔آئندہ نسلوں کا ہم پر فرض ہے کہ دہشت گردی سے پاک پاکستان دیں، سی پیک پورے خطے کا سرمایہ اور امن کی ضمانت ہے،جہاد ریاست کا حق ہے اور اسے ریاست کے پاس رہنا چاہیے،قومی جہاد آج قوم کی ضرورت ہے۔ جمہوری روایات کی مضبوطی ہم سب کی مضبوطی ہے، پاکستان کی طاقت کا اصل سرچشمہ نوجوان ہیں ´ خطاب سے قبل آرمی چیف نے یادگار شہداء پر پھول چڑھائے جبکہ خطاب کے بعد انہیں پاک فوج کے چاق و چوبند دستے نے سلامی بھی دی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *