ispr

وادی راجگال میں آپریشن شروع آرمی چیف کلبھوشن کیس کا جائزہ لے رہے ہیں۔ ترجمان پاک فوج

راولپنڈیٟ : ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے پاک فوج نے وادی راجگال میں خیبر 4 آپریشن کا آغاز کردیا جس کا مقصد سرحد پار موجود جنگجو تنظیم داعش کی پاکستانی علاقوں میں کارروائیوں کو روکنا ہے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو نے آرمی چیف جنرل قمر باجوہ سے رحم کی اپیل کی ہے جس کے بعد آرمی چیف کلبھوشن کیس کا جائزہ لے رہے ہیں تاہم کلبھوشن کی رحم کی اپیل پر فیصلہ میرٹ پرکیا جائے گا۔۔ پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے کہا ملک بھر میں آپریشن ردالفساد کامیابی سے جاری ہے تاہم آج سے خیبر 4 آپریشن کا آغاز کردیا گیا ہے جو آپریشن ردالفساد کا حصہ ہے، خیبر 4 آپریشن وادی راجگال اور شوال کے علاقے میں داعش کی بڑھتی ہوئی موجودگی کے باعث شروع کیا گیا ہے، آپریشن کا مقصد سرحد پار موجود جنگجو تنظیم داعش کی پاکستانی علاقوں میں کارروائیوں کو روکنا ہے اور علاقے میں داعش کا اثرو رسوخ ختم کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ 22 فروری سے آپریشن ردالفساد کا آغاز ہوا جس میں 46 بڑے آپریشن کیے گئے، کراچی میں دہشت گردی کے واقعات میں 98 فیصد کمی آئی اور آنے والے دنوں میں دہشت گردی کے واقعات میں مزید کمی آئی گی، ایپکس کمیٹی میں پانی سمیت کراچی کو درپیش تمام مسائل کا جائزہ لیا گیا اور بہتری کے لیے فیصلے کیے گئے ہیں، ردالفساد کے تحت سندھ میں 522 دہشتگردوں نے ہتھیار ڈالے جب کہ 15 ہلاک ہوئے، پنجاب میں 6 بڑے آپریشن کے دوران 22 دہشت گرد ہلاک ہوئے جب کہ خیبر پختونخوا میں 27 بڑے آپریشن کیے گئے۔انہوں نے کہا لائن آف کنٹرول کی صورتحال گزشتہ دنوں میں کافی کشیدہ رہی، بھارت جب بھی سیز فائر کی خلاف ورزی کرتا ہے وہ عام شہریوں کو نشانا بناتا ہے تاہم پاک فوج اس طریقہ کو بہتر نہیں سمجھتی اور جس بنکر سے فائر ہوتا ہے اسکو نشانا بنایا جاتا ہے۔ افغانستان میں اس وقت افغان فورسز اور حکومت کی گرفت کمزور ہورہی ہے جب کہ راجگال آپریشن کے بارے میں افغان فورسز کو آگاہ کیا ہے، پاک افغان سرحد پر باڑ لگانے کا کام بھی شروع کردیا گیا ہے جس کو مانیٹر کیا جائے گا جب کہ حکومت پاکستان نے افغان حکومت سے ہر قسم کے تعاون کا اعلان کیا ہے اور افغان فورسز سے ہر قسم کے تعاون کے لیے ہمارے دروازے کھلے ہیں۔ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ داعش کا پاکستان میں نہ تو کوئی منظم نیٹ ورک ہے اور نہ ہی ہم س کو پاکستان میں آنے کی اجازت دیں گے، افغانستان میں داعش کا نیٹ ورک ضرور ہے جو نہ صرف بڑھ رہا ہے بلکہ مضبوط بھی ہورہا ہےصہ نہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *