Untitled-1

عامر آوٹ کرے ، حسن آوٹ کرے یا میں ، خوشی برابر ہوتی ہے۔ جنید خان

صوابی: قومی کرکٹ ٹیم کے فاسٹ باولر جنید خان نے کہا ہے پریکٹس نہ کرنے کی وجہ سے ہم بھارت سے پہلا میچ نہیں جیت سکے ۔ عامر آوٹ کرے ، حسن آوٹ کرے یا میں کروں خوشی برابر ہوتی ہے ۔ بھارت کے تمام بیٹسمین ٹارگٹ تھے ۔بھارتی کھلاڑیوں کا میچ ہارنے کے بعد بھی رویہ مثبت تھا ۔انہوں نے وطن واپسی کے بعد اپنے مداحوں کے ہجوم میں میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا بھارت سے پہلا میچ ہارنے کا افسوس تھا ٹیم پر پریشر تو تھا لیکن ہمارے پاس کھونے کے کچھ نہیں تھا۔ کپتان نے ہمیں بہت سپورٹ کیا۔ فائنل میچ جیت کی پچھلے سارے غم بھول گئے۔بھارت کے خلاف میچ سے پہلے مشاورت کی تھی ۔ نئے کھلاڑیوں نے ٹیم میں اچھی کارکردگی دکھائی ۔ہم سب کی دعاوں سے جیت کر آئے۔ سب کی خواہش تھی کہ ہم جیت جائیں۔ بھارت کے خلاف میچ بغیر دباو کے کھیلے۔چیمپئینز ٹرافی جیتنا بڑے اعزاز کی بات ہے ۔ انہوں نے کہا پورے ٹورنامنٹ میں پاکستانی باولرز نے اچھی کارکردگی کا مظارہ کیا۔ فائنل میں ٹیم نے مثبت سوچ کے ساتھ کھیلا اور ہم جیت گئے ۔ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ پاکستان ٹرافی جیت جائے گا۔ ہم یہاں سے ٹرافی جیتنے کا سوچ کر گئے تھے۔ سب کھلاڑیوں کا نام تاریخ میں آگیا ہے ۔ چیمپئنز ٹرافی کے دوران ہم نے کوشش کی کہ روزے رکھیں۔ ۔ بہت جلد بین الاقوامی کرکٹ پاکستان آئے گی ۔ عید کے بعد کاونٹی کھیلنے کےلئے جاونگا۔ بتایا گیا ہے کہ جنید خان کا صوابی پہنچنے پر شاندار استقبال کیا گیا ۔لوگوں نے جنید خان کو کندھوں پر اٹھا لیا۔ پھولوں کے ہار پہنائے۔ پاکستان زندہ باد کے نعرے علاقے میں گونجتے رہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *