Pakistani_actress_Rani_in_1966 copy

ریکھا بھی امراو جان ادا میں رانی کے کردار کی مداح

لاہور :اداکارہ ریکھا نے امراو جان میں کام کرکے بہت نام کمایا تھا لیکن ریکھا نے اس بات کا اعتراف کیا تھا کہ اداکارہ رانی نے امراو جان ادا میں ان سے بہتر کام کیا تھا ۔ میں ان کے پائے کی اداکاری نہیں کر پائی ۔اداکارہ رانی کا اصل نام ناصرہ تھا وہ 8 دسمبر1946 کولاہور میں پیدا ہوئیں،انہیں پاکستان کے معروف ہدایت کار انور کمال پاشا نے 1962 میں فلم محبوب  میں پہلی بار رانی کے نام سے فلم انڈسٹری میں متعارف کروایا اس کے بعد یہ نام ان کی زندگی کا حصہ بن گیا ۔رانی کو 1967 میں ریلیز ہوئی فلم دیوربھابھی  نے شہرت کی بلندیوں پر پہنچادیا بعد ازاں 1970 میں ریلیز ہوئی فلم انجمن نے انہیں پاکستان کی صف اول کی اداکارہ بنادیا۔ اداکارہ رانی نے اردو کے علاوہ پنجابی فلموں میں بھی کام کیا، ان کی کامیاب فلموں میں دیور بھابھی، ہزار داستان، چن مکھنا ، ساجن پیارا، دنیا مطلب دی، جند جان ،تہذیب اور امرا¶ جان ادا شامل ہیں، نوے کی دہائی میں رانی نے ٹی وی سیریل خواہش اور فریب میں بھی اپنی اداکاری کے جوہر دکھائے۔ رانی نے فلمی زندگی میں جتنا سکون پایا اتنی ہی بدسکونی رانی کو ازواجی زندگی میں ملی ۔ کی دہائی کے آخر میں رانی نے پہلی شادی فلم پروڈیوسر حسن طارق سے کی جس سے ان کی ایک بیٹی پیدا ہوئی، شادی زیادہ عرصہ نہ چل سکی اور اس کا انجام طلاق کی صورت میں نکلا،اس کے بعد وہ پروڈیوسرمیاں جاوید کے ساتھ ازدواجی بندھن میں بندھیں لیکن اس شادی کا اختتام بھی علیحدگی پر ہوا۔ رانی سے تیسری شادی ٹیسٹ کرکٹر سرفراز نوازسے کی لیکن وہ بھی ناکامی سے دوچار ہوئی۔ رانی کو کینسر جیسا جان لیوا مرض لاحق تھا اور اسی جان لیوا بیماری کے باعث وہ 27 مئی 1993 کو 46 برس کی عمر میں دنیا فانی سے کوچ کرگئیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *